پاک-افغان انگور اڈہ گیٹ کھول دیا گیا، ایک دن عوام کے لیے مختص

0

وانا(ای این این ایس) جنوبی وزیرستان، پاک-افغان بارڈر انگوراڈہ گیٹ 4 ماہ کے بعد تجارت کیلئے کھول دیا گیا ہے۔ ہفتہ میں ایک دن مسافروں کیلئے، جبکہ ہفتہ کے 6 دن تجارتی سرگرمیوں کیلئے مختص کردئے گئے۔
بارڈر کھولنے کا باقاعدہ اعلان بریگیڈئیر عبیداللہ انور نے کیا جبکہ ان کے ہمراہ 131 ونگ کے کرنل جنید محمود اور کور ایس ایم مقبول بھی موجود تھے۔
بریگیڈئیر عبیداللہ انور نے پاک افغان بارڈر انگوراڈہ پر تعینات فورسز کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا،کہ کو رونا وباء جس نے پوری دنیا کو لپیٹ میں لے رکھا ہے، جس کی وجہ سے احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے پاک افغان بارڈر کو بند کیا گیا تھا، اس لئے فورسز کو چاہئے کہ کو رونا ایس او پیز کو مد نظر رکھتے ہوئے اس کا خاص خیال رکھنا ہوگا۔
بارڈر پر تعینات کرنل جنید محمود نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ بارڈر کے اس پار سے آنیوالی گاڑیوں کو باقاعدہ چیکنگ کے مرحلے سے گذارتے ہوئے ان کو اسپرے کرنے کے بعد چھوڑا جاتا ہے، کو رونا ایس او پیز کا خاص خیال رکھنے کیلئے معقول انتظامات کئے گئے ہیں،پاک افغان بارڈر 16 مارچ یعنی 4 مہینے قبل کو رونا وباء کی وجہ سے احتیاطی تدابیر کو مدنظر رکھتے ہوئے بند کردیا گیا تھا، تاہم پاک افغان بارڈر کے کھولنے کے بعد بارڈر کے دونوں اطراف لوگوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے۔ لوگوں نے حکومت پاکستان، ایف سی، اور پاک آرمی کے اس قدم کو احسن قدم قرار دیا ہے۔
مقامی قبائلی عمائدین اور علماء مولانا شاکراللہ، مولانا تصبیح اللہ، ملک پاکستانی خیل، ملک خان اداخیل کے علاوہ عام لوگوں اور ٹریڈ یونین کی جانب سے اس اقدام کو نہایت سراہا گیا ہے۔
ٹریڈ یونین کے صدر سردار علی نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ بارڈر کھولنے کے بعد تجارتی سرگرمیاں بحال ہونا شروع ہوجائے گی، جس کی وجہ سے پچھلے چند ماہ سے بند کاروبار چل پڑے گا،جس سے نہ صرف تجارت کو فروغ ملے گی، بلکہ عام مزدوروں کا چولھا بھی جل پڑے گا۔

About Author

Leave A Reply