وفاق نے سندھ کے تین بڑے اسپتالوں پر کنٹرول کرلیا، سندھ بھر میں امراض قلب سینٹر بند ہونے کا خدشہ، بلاول بھٹو نے اقدام کو صوبائی خودمختاری پر حملہ قرار دے دیا

0

کراچی (ای این این) وفاقی حکومت نے سندھ کے تین بڑے اسپتالوں جناح، چلدرین اور این آئی سی وی ڈی کا انتظام سنبھال لیا ہے، جس کے سندھ کے 8 شیروں میں قائم امراض دل کے سینٹرز کا مستقبل خطرے میں پڑ گیا ہے۔خیال رہے کہ ان 8 مراکز کو سندھ حکومت بجٹ دیا کرتی تھی لیکن اب وفاق کے بعد یے سلسلہ ختم ہو سکتا ہے۔
یے مراکز سندھ کے شہری اور دیہی علاقوں کے لوگ مفت فائدہ اٹھاتے ہیں۔
دوسری جانب چیئرمین پی پی پی بلاول بھٹو زرداری نے وفاقی حکومت کی جانب سے سندھ کے تین اسپتالوں کا کنٹرول اپنے ہاتھوں میں لینے پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت کا اقدام صوبائی خودمختاری پر حملے کے مترادف ہے۔
بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت عوامی غیظ و غضب سے قبل سندھ کے تین اسپتالوں سے متعلق اپنا فیصلہ واپس لے۔
ان کا کہنا تھا کہ ہم ہر فورم پر وفاقی حکومت کے اس اقدام کی مزاحمت کریں گے۔
بلاول بھٹو زرداری کا مزید کہنا تھا کہ وفاقی حکومت نے سپریم کورٹ میں حکومت سندھ کی نظرثانی اپیل پر فیصلہ آنے تک کا انتظار بھی گوارا نہیں کیا۔

چیئرمین نیب کی جانب سے وفاقی وزراء کے خلاف تحقیقات روکنے کے اعترافی بیان اور وفاقی حکومت کے حالیہ اقدام نے ملک میں آئینی بحران کو ظاہر کردیا ہے۔
بلاول نے کہا کہ جے پی ایم سی، این آئی سی وی ڈی اور این آئی سی ایچ پر سندھ کے عوام کے اربوں روپے لگے ہوئے ہیں۔

 یاد رہے کہ وفاقی حکومت نے سپریم کورٹ کے فیصلہ کے تحت انتظام سنبھالا ہے، جبکہ سندھ حکومت نے اس فیصلے کے خلاف اپیل دائر کر رکھی ہے۔

 بلاول بھٹو نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کے تحت ملنے والے مذکورہ اسپتالوں میں حکومت سندھ نے انقلابی اقدامات  اٹھائے ہیں۔ بلاول بحٹو زرداری این آئی سی وی ڈی کا دیگر شہروں میں قیام حکومتِ سندھ کا قابل تحسین اقدام ہے۔
پاکستان پیپلز پارٹی اور سندھ کے عوام اپنے ٹیکس اور محنت سے بنائے اثاثوں کو غصب نہیں کرنے دیں گے۔

About Author

Leave A Reply