ہم آہنگی میں نمایاں کردار ادا کرنے والی ملتان کی ڈاکٹر - Eye News Network

ہم آہنگی میں نمایاں کردار ادا کرنے والی ملتان کی ڈاکٹر

0

ملتان(رپورٹ: شیزہ کوثر)ملتان کی زرینہ اشرف  گزشتہ 15سال سے بطور گائنا کولوجسٹ اپنے فرائض سرانجام دے رہی ہیں ۔ زرینہ کے کلینک پر رنگ، مذہب ونسل کے فرق کو نہیں دیکھا جاتا بلکہ سب کا علاج انسانی بنیادوں پر کیا جاتا ہے زرینہ اشرف اب شہر میں مقیم بے یارومددگار مسیحی اور ہندو مذہب سے تعلق رکھنے والی خواتین کی علمبردار بھی بن کر ابھری ہیں۔ ان کے کلینک پر ایک ہفتہ کے دوران ڈلیوری کےتقریبا 4 سے 5 کیس آتے ہیں جن میں اکثر کا تعلق دوسرے مذاہب سے ہوتا ہے۔

 زرینہ کے کلینک پر متعدد مرتبہ خواتین کے سسرال والے اور شوہر بیٹی پیدا ہونے پر خواتین کے ساتھ کلینک پر ہی برا رویہ شروع کردیتے ہیں اس تمام تر صورتحال میں ڈاکٹر زرینہ کئی مسیحی اور ہندو جوڑوں کی رہنمائی کرچکی ہیں اور انکی کونسلنگ کا کام آنے والے وقت میں ان سے میل جول بنا کر سرانجام دیتی رہتی ہیں ۔ ان کا یہ طرز عمل ہم آہنگی کی بہترین مثال ہے ۔گزشتہ دو سال کے دوران زرینہ اشرف کے کلینک پر لڑکیوں کو جنم دینے والی 4 مسیحی خواتین کو انکے سسرال والوں نے تشدد کا نشانہ بھی بنایا ۔ اس تمام تر صورتحال میں زرینہ اشرف نے ان خواتین کی قانونی معاونت بھی کی اور اپنا اثرواسوخ استعمال کرتے ہوئے انکی سسرال والوں سے صلح سے لے کر ویلفیر سنٹرز میں عارضی قیام کے انتظامات کر کے بھی مسیحی اور ہندو خواتین سے اپنی محبت کا ثبوت بھی دیا ۔

ڈاکٹر زرینہ کہتی ہیں کہ وہ ڈاکٹر روتھ فاو سے بے حد متاثر ہیں اور وہ سمجھتی ہیں کہ انسانیت کی خدمت کرکے ہی امن ، محبت اور ہم آہنگی کی مثالیں قائم کر سکتے ہیں جس سے ملک میں بسنے والی اقلیتیں ہمارے معاشرے میں خود کو پہلے سے زیادہ محفوظ سمجھیں گی ۔ زرینہاشرف اپنی پوری فیملی جن میں انکی دو بیٹیوں اور دو بیٹے اور شوہر شامل ہیں کےساتھ مل کر کرسمس اور دیوالی جیسے تہواروں کے موقع پر نہ صرف دوسری مذہبی برادری سے تعلق رکھنے والے لوگوں تحائف دیتی ہیں بلکہ انکے اعزاز میں اپنے گھر میں دعوت بھی رکھتی ہیں اور اس تمام تر محبت کو دیکھتے ہوئے مسیحی اور ہندو برادری سے  تعلق رکھنے والی فیمیلز انکو اپنے تہواروں پر خصوصی دعوت دے کر بلاتی ہیں جو معاشرے میں ہم آہنگی کی بہترین مثال ہے۔

About Author

Leave A Reply