گوجرہ میں شادی کے بعد کلہاڑی کے وار سے زخمی نوجوان ہوش میں نہ آسکا، دو ملزمان گرفتار

0

اسلام آباد (رپورٹ: اظہر خان/ ای این این ایس) پنجاب کے ضلع گوجرہ کے ایک گائوں میں شادی کرنا نوجوان کا جرم بن گیا۔ ملزمان نے کلہاڑی کے ہے درپے وار کرکے نوجوان کو مردہ حالت میں پھینک دیا۔
اطلاعات کے مطابق نواحی گاؤں 179گ ب میں نعمان شاہد نے 20 روز قبل 211 گ ب کی ثناء نامی لڑکی سے شادی کی تھی، جس پر لڑکی کے پھوپھی زاد بھائی رضوان اور شاہد مبینہ طور پر کلہاڑی کے وار کرکے نوجوان کو مردہ حالت میں پھینک کر فرار ہو گئے تھے۔
ای این این ایس کو موصول ہونے والی فوٹیج میں دو ملزمان کو نوجوان پر کلہاڑی کے ہے درپے وار کرتے دیکھا جا سکتا ہے، جبکہ اس نوجوان کی چیخ و پکار بھی واضح طور پر سنی جا سکتی ہے۔
متاثرہ نوجوان کو اسپتال پہنچایا جسے بعد ازاں تشویشناک حالت میں الائیڈ اسپتال ریفر کردیا گیا، جہاں پر اسے وینٹی لیٹر پر رکھا گیا ہے۔
گوجرہ کے سینئر صحافی غلام مرتضیٰ کے مطابق لڑکی کی والدہ نے ملزمان کو رشتہ دینے کی بات کی تھی لیکن بعد میں نعمان سے شادی کرادی۔
صدر پولیس گوجرہ نے دونوں ملزمان کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کر لیا ہے۔ ملزمان نے 23 مارچ کو نوجوان کو دوکھے سے بلا کر حملا کیا اور وہ اب تک وینٹیلیٹر پر زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہے۔

About Author

Leave A Reply