وزیر اعلیٰ سندھ کی زیر صدارت مالی معاملات پر اہم اجلاس

0

(کراچی (ای این این

وزیر اعلی

کراچی/ٹکرز برائے نشر/ 19 اپریل 2019

وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت صوبے کی مالی صورتحال پر اجلاس

اجلاس میں چیف سیکریٹری سے ممتاز علی شاہ، چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ محمد وسیم، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، سیکریٹری خزانہ، اور پی ڈی کے افسران شریک

صوبے کے کل بجٹ کا حجم 1124 بلین روپے ہے جب کہ کل اخراجات 1144.5 بلین ہے

اس حساب سے کل خسارہ 20.5 بلین روپے بنتا ہے، وزیراعلیٰ سندھ کو سیکریٹری خزانہ کی بریفنگ

رواں سال 665.1 بلین روپے وفاقی حکومت سے ملنے کی امید تھی اور مارچ تک 390.2 بلین روپے ملے ہیں

صوبے کے غیر ترقیاتی اخراجات 773.2 بلین روپے ہیں جس میں وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت پر کٹوتی کرکے 700 بلین روپے کردیئے ہیں

صوبے کی کل پراونشل اور ڈسٹرکٹ اے ڈی پی جوکہ 282 بلین روپے کی ہے اسکے لیے 133 بلین ابھی تک جاری ہوچکے ہیں

وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت پر 804 ترقیاتی اسکیمز کا کام تیز کیا گیا ہے، چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈیولپمنٹ محمد وسیم کی بریفنگ

804 اسکیمز پر 74.3 بلین روپے اخراجات ہونگے جس میں ابھی تک 50.9 بلین روپے جاری کئے گئے ہیں، بریفنگ

وزیراعلیٰ سندھ نے باقی 23.4 بلین روپے جاری کرنے کی ہدایت دے دی تاکہ یہ اسکیمز مکمل ہوجائیں

جو 73.2 بلین روپے ہم نے غیر ترقیاتی بجٹ سے کٹوتیاں کرکے پیسے بچائے ہیں وہ ترقیاتی کاموں پر خرچ کریں، وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت

مالی مشکلات کے باوجود ہم نے صوبے میں ترقیاتی کام کررہے ہیں، یہ بہت اہم ہے، وزیراعلیٰ سندھ

کراچی میں جاری ترقیاتی کام جس میں انڈرپاسز اور فلائی اوورز اور سڑکوں کی بہتری کے کام شامل ہیں یہ ہر صورت میں جون کے آخر تک ختم کرنا چاہتا ہوں، وزیراعلیٰ سندھ

نئے بجٹ میں ہم شہری ترقی کے ساتھ دیہی ترقی پر بھی توجہ دیں گے، وزیراعلیٰ سندھ

سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت صوبے کی مالی صورتحال پر اجلاس

اجلاس میں چیف سیکریٹری سے سید ممتاز علی شاہ، چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ محمد وسیم، وزیراعلیٰ سندھ کے پرنسپل سیکریٹری ساجد جمال ابڑو، سیکریٹری خزانہ،  اور پی ڈی کے افسران شریک

صوبے کے کل بجٹ کا حجم 1124 بلین روپے ہے جب کہ کل اخراجات 1144.5 بلین ہے

اس حساب سے کل خسارہ 20.5 بلین روپے بنتا ہے، وزیراعلیٰ سندھ کو سیکریٹری خزانہ کی بریفنگ

رواں سال 665.1 بلین روپے وفاقی حکومت سے ملنے کی امید تھی اور مارچ تک 390.2 بلین روپے ملے ہیں

صوبے کے غیر ترقیاتی اخراجات 773.2 بلین روپے ہیں جس میں وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت پر کٹوتی کرکے 700 بلین روپے کردیئے ہیں

صوبے کی کل پراونشل اور ڈسٹرکٹ اے ڈی پی جوکہ 282 بلین روپے کی ہے اسکے لیے 133 بلین ابھی تک جاری ہوچکے ہیں

وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت پر 804 ترقیاتی اسکیمز کا کام تیز کیا گیا ہے، چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈیولپمنٹ محمد وسیم کی بریفنگ

804 اسکیمز پر 74.3 بلین روپے اخراجات ہونگے جس میں ابھی تک 50.9 بلین روپے جاری کئے گئے ہیں، بریفنگ

وزیراعلیٰ سندھ نے باقی 23.4 بلین روپے جاری کرنے کی ہدایت دے دی تاکہ یہ اسکیمز مکمل ہوجائیں

جو 73.2 بلین روپے ہم نے غیر ترقیاتی بجٹ سے کٹوتیاں کرکے پیسے بچائے ہیں وہ ترقیاتی کاموں پر خرچ کریں، وزیراعلیٰ سندھ کی ہدایت

مالی مشکلات کے باوجود ہم نے صوبے میں ترقیاتی کام کررہے ہیں، یہ بہت اہم ہے، وزیراعلیٰ سندھ

کراچی میں جاری ترقیاتی کام جس میں انڈرپاسز اور فلائی اوورز اور سڑکوں کی بہتری کے کام شامل ہیں یہ ہر صورت میں جون کے آخر تک ختم کرنا چاہتا ہوں، وزیراعلیٰ سندھ

نئے بجٹ میں ہم شہری ترقی کے ساتھ دیہی ترقی پر بھی توجہ دیں گے، وزیراعلیٰ سندھ

About Author

Leave A Reply