صنفی تشدد کے مقدمات کی سماعت 27 جولائی سے  پاکستان کے ہر ضلع مرکز میں ہوگی، جھوٹی گواہی اور تاخیر برداشت نہیں کی جائیگی: چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ

0

کراچی (ای این این ایس) چیف جسٹس پاکستان آصف سعید کھوسہ نے کہا ہے کہ ملک کے  تمام ضلع  مراکز میں صنفی تشدد کے مقدمات سن نے کے لیے عدالتیں قائم  کی جارہی ہیں، جو 27 جولائی سے کام شروع کر دینگی۔

انہوں نے اس بات کا اعلان کراچی میں تقریب سے  خطاب کے دوران کیا۔ چیف جسٹس  کا کہنا تھا کہ ملکی کرمنل جسٹس سسٹم میں دو بڑی کمزوریاں ہیں جس کی وجہ سے مقدمات کا فیصلہ جلد نہیں ہو پاتا۔

انہوں نے کہا کہ جھوٹی گواہی اور جان بوجھ کر تاخیری حربوں سے مقدمات کے فیصلے نہیں سنائے جا سکتے، لہٰذا اب ایسا نہیں ہوگا، ہم نے تین بڑے فیصلے دیے جس کے تحت شروع ہونے والے مقدمات کا فیصلہ سنانا ضروری ہوگا۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے مزید کہا کہ جھوٹی  گوہی دینے والے بھی مجرم ہیں اور ان کی مدد یا انہیں استعمال کرنے والے پولیس افسران بھی سزا سے نہیں بچ سکتے۔

انہوں نے کہا کہ اب رمانڈ اور مقدمات چلانے والے مئجسٹریٹ الگ کر دیے گئے ہیں کیونکہ دونوں کام ایک ہی کرنے والے مئجسٹریٹ/ سول جج کے پاس وقت ہی نہیں بچتا تھا کہ وہ مقدمات بھی چلائے۔

اس موقع پر آئی جی سندھ ڈاکٹر کلیم امام و دیگر اعلیٰ حکام بھی موجود تھے۔

About Author

Leave A Reply