خان کے جانثار ہیں، پارٹی بدلنا ہماری فطرت نہیں، نظریاتی کارکنان کا کراچی میں احتجاج جاری

0

کراچی (ای این این ایس/پ ر) تحریک انصاف سندھ کے بانی اراکین کو نظر انداز کئے جانے کیخلاف کراچی پریس کلب پر 24 دن سے جاری احتجاجی کیمپ پر بیٹھے کارکنان کا کہنا ہے کہ ہم لوٹے نہیں، خان کے جانثار ہیں، پارٹی بدلنا ہماری فطرت نہیں۔

نظریاتی ورکرز اتحاد کے صدر محمد یوسف ڈالیا مقامی قیادت سے سخت نالاں نظر آتے ہیں انہوں نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کراچی میں ہم نے پارٹی 1999میں جوائن کی تھی اس وقت کوئی پارٹی میں آتا بھی نہیں تھا لوگ ڈرتے تھے اور یہ آج ہمیں ہی دیوار سے لگا رہے ہیں۔

تحریک انصاف سندھ کی مقامی قیادت کی طرف سے پارٹی چھوڑ کر جانے کے الزام پر یوسف ڈالیا کا کہنا تھا کہ اگر 1999سے لیکر آج تک میرا ایک دن کیلئے بھی پارٹی چھوڑنا ثابت کردے تو میں تحریک انصاف کیا سیاست ہی چھوڑ دونگا۔ ان کا مزید کہنا تھا میں نے کبھی بھی خانصاحب کا ساتھ نہیں چھوڑا اگر کسی کے پاس کوئی ثبوت ہے تو مجھے دکھائے، میں کبھی بھی کسی دوسری سیاسی جماعت کا حصہ نہیں رہا۔
انہوں نے مزید انکشاف کیاکہ تین کا ٹولہ متحرک ہے جو پارٹی کے عزائم کو ایکطرف رکھ کر صرف و صرف اپنے مقاصد کیلئے سرگرم ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ خرم شیر زمان دوسری بار رکن سندھ اسمبلی منتخب ہوئے ہیں اور اس وقت کراچی ڈویژن کے صدر بھی ہیں۔ ان کی کارکردگی کیارہی سب جانتے ہیں۔ نظریاتی کارکنان کو تحفظات اسی بات پر ہیں کہ جو لوگ اراکین اسمبلی ہیں ان کو عوامی عہدے کیوں دئیے گئے ہیں۔ کراچی پریس کلب میں 24دن سے جاری دھرنے کی قیادت لاڑکانہ کے نائب صدر بانی و نظریاتی رکن شاہد رند کر رہے ہیں۔
کراچی سے نظریاتی و بانی رکن یوسٖف ڈالیا، حیدرآباد سے تسنیم زہرہ، فضاء خان شیخ، سائرہ علی، میر ملاح اور پورے سندھ سے نظریاتی کارکنان احتجاجی کیمپ میں شریک ہیں۔

About Author

Leave A Reply