حیدرآباد میں کمسن بہن، بھائی کا وحشیانہ قتل: مقدمہ سے انسداد دہشتگردی کی دفعات غائب

0

حیدرآباد(ای این این ایس) وحشی درندوں نے کمسن بہن بھائی کو قتل کردیا۔
حیدرآباد کے جی او آر تھانے کی حدود سے 8 جولائی کو گھر سے برف لینے کے لئے نکلنے والے بہن بھائی عبدالقادر اور رخسانہ لاپتہ ہوگئے تھے۔
جس کی اطلاع پولیس کو دی گئی۔ دریں اثناء دو روز قبل عبدالقادر ایئرپورٹ کے قریب سے زخمی حالت میں برآمد ہوا جو سول ہسپتال میں جاں بحق ہوگیا جبکہ رخسانہ کی لاش گذشتہ شب بسم اللہ سٹی سے برآمد ہوئی ہے۔
بچے کی حالت سے لگ رہا تھا کہ اس کو بدترین تشدد کا نشانہ بنایا گیا اور وہ تڑپ تڑپ کر جان کی بازی ہار گیا۔

دوسری جانب پولیس کہنا ہے کہ بچی کی گردن پر تشدد کے نشانات ہیں اور بچی کو گلا گھونٹ کو قتل کیا گیا ہے، تاہم پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے کے بعد ہی حتمی وجوہات سامنے آسکیں گی۔
پولیس نے اتنی بڑی بربریت کے واقعہ میں انسداد دہشتگردی کی دفعات نہیں لگائیں جس سے کئی سوالات جنم لے رہے ہیں۔
سماجی حلقوں کا کہنا ہے کہ اس میں زینب قتل کیس جیسی صورتحال لگ رہی ہے، اس لیے انسداد دہشتگردی کی دفعات لگانے کے ساتھ ساتھ وحشی قافلوں کو گرفتار کیا جائیگا۔

About Author

Leave A Reply