بااثر وی سی شہید بینظیر بھٹو یونیورسٹی کو حراسگی کا الزام لے ڈوبہ، استعیفیٰ وزیر اعلیٰ کو بھیج دیا، فریال تالپور نے دو دن میں وعدہ پورا کر دکھایا، عوامی جدوجہد رنگ لے آئی

0

نواب شاہ(ای این این) شہید بینظیر بھٹو یونیورسٹی کے وائس چانسلر ارشد سلیم اپنے عہدے سے مستعفی ہوگئے ہیں اور انہوں نے اپنا استعیفی وزیراعلیٰ سندھ کو ارسال کردیا ہے۔

وائس چانسلر ارشد سلیم پر یونیورسٹی کے انگلش ڈپارٹمنٹ کی فائنل ایئر کی طالبہ فرزانہ جمالی کو جنسی حراسگی کا الزام تھا اور ان کے خلاف جنسی حراسگی کا مقدمہ بھی درج ہے۔ ارشد سلیم کو سیاسی اثر رسوخ کے باعث سال 2012 میں کنٹرولر ایگزامینیشن سے وائس چانسلر کی حیثیت سے مقرر کیا گیا تھا جس نے وائس چانسلر تعنیات ہونے کے بعد یونیورسٹی کے متعدد اساتذہ، رجسٹرار و دیگر ملازمین کو جبری برطرف کردیا تھا جس کے بعد اس کے خلاف یونیورسٹی ملازمین اساتذہ اور طلباء کی جانب سے بھرپور احتجاج کیا گیا مگر سیاسی اثر رسوخ کے باعث کوئی کاروائی نہیں کی گئی۔

وائس چانسلر ارشد سلیم کے خلاف یونیورسٹی کی طالبہ فرزانہ جمالی نے یکم ستمبر سے اپنی جدوجہد کا آغاز کیا اور مسلسل 39 روز بھرپور جدوجہد کی اور دو روز قبل پاکستان پیپلز پارٹی کی مرکزی رہنماء و رکن سندھ اسمبلی فریال تالپور نے فرزانہ جمالی کے والدین سے زرداری ہاوس میں ملاقات کرکے انصاف دلانے کی یقین دہانی کروائی تھی اور والدین نے وائس چانسلر کو ہٹانے کا مطالبہ کیا تھا جس پر فریال تالپور نے دو روز کی مہلت طلب کی تھی اور منگل روز وائس چانسلر ارشد سلیم مستعفی ہوگئے۔ اس سے قبل حراسگی کے الزام میں ایک لیکچرر خٹک پہلے ہی معطل کیا جا چکا ہے۔

About Author

Leave A Reply