آزاد کشمیر کے ہزاروں شہریوں کا ایل او سی عبور کرنے کےلیے مارچ، تبدیلی سرکار و کشمیر انتظامیہ پریشان

0

مظفرآباد/ اسلام آباد(ای این این ایس) جموں کشمیر لبریشن فرنٹ (جے کے ایل ایف) کی کال پر آزاد کشمیر بھر سے قافلے مظفرآباد پہنچ گئے ہیں اور چکوٹھی سے لائن آف کنٹرول عبور کرنے کے لئے مارچ شروع کردیا گیا ہے۔
اس صورتحال کے پیش نظر وزیر اعظم عمران خان اور مقامی انتظامیہ پریشان ہو گئی ہے۔ وزیر اعظم پاکستان نے منع کیا ہے کہ ایل او سی کے قریب نہ جایا جائے کیونکہ بھارت بہانا بنا کر حملہ کر سکتا ہے۔

آزاد کشمیر سے آنے والے شرکاء اپر اڈاہ میں جمع ہوئے جس کے بعد پیدل سیز فائر لائن کی جانب مارچ شروع کردیا گیا۔
اس مارچ کا مقصد مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کے نفاذ اور انسانیت سوز مظالم پر عالمی دنیا کی توجہ مبذول کروانا ہے۔
آزادی مارچ میں بزرگ، خواتین اور ہزاروں کی تعداد میں نوجوان شریک ہیں۔ مارچ کے شرکاء کو لائن آف کنٹرول کی طرف بڑھنے سے روکنے کے لئے پاکستانی قانون نافذ کرنے والے اداروں نے حکمت عملی ترتیب دے دی ہے۔
کمشنر مظفرآباد ڈویژن نے کہا ہے کہ مارچ کرنے والے شہریوں پر بھارتی فوج کی فائرنگ اور گولہ باری کا خدشہ ہے، جس سے شہریوں کو شدید جانی نقصان ہو سکتا ہے۔

About Author

Leave A Reply